ہم عوام اور ہماری سوچ

جب فوجی ریٹائرڈ ہو جائے یا زر او اختیارات میں کمی کا اندیشہ ہو، سیاستدان اپوزیشن میں چلا جائے، سرمایہ دار کا سرمایہ خطرہ میں پڑ جائے اور بیوروکریسی کی ترقی یا مفادات متاثر ہونے کا خدشہ ہو تو اچانک ان کے سینے کے دائیں طرف واقع دل میں نہ صرف قوم کیلئے درد اٹھنا شروع ہو جاتا ہے بلکہ گاہے بگاہے آنکھوں سے خون بھی ٹپکتا ہے_____

ایسے میں بیانات داغے جاتے ہیں
 ” ملک اور قوم کی سلامتی کو شدید مشکلات کا سامنا۔۔۔۔عوام غربت، لاچاری اور دہشتگردی کا شکار۔۔۔۔محافظ راہزن۔۔۔عوام انصاف و روزگار کی متلاشی او منتظر۔۔۔۔کرپشن دیمک کی طرح ملک چاٹ۔۔۔۔غیر جمہوری قوتوں او رویوں سے خطرہ۔۔۔”

 ‏ہم عوام جب ایسے”جذباتی” بیانات اور تقاریر سنتے، پڑھتے اور دیکھتے ہیں تو۔۔۔۔

 ‏” یہ اصل میں قوم، جمہوریت او وطن کے خیر خواہ ہیں۔۔۔شاباش کیا ٹھیک ٹھاک بات کی۔۔۔۔قوم اس طرح لیڈروں کی متلاشی۔۔۔یہ ہی ہمارے مسائل ختم کر۔۔۔۔ترقی اور خوشحالی انہی سے۔۔۔ہے کوئی جو قوم و وطن کی ایسی ترجمانی کرے۔۔۔۔دکہ۔۔۔دا نر بچے دے۔۔۔۔داسے خلق پکار دی چی ہر سا۔۔۔۔ڈیر خہ۔۔۔۔”

 ‏لیکن جب۔۔۔۔ 

 “‏زر کی بوری کھل۔۔۔۔ اختیارات مل ۔۔۔۔قانون اور ضابطے پامال۔۔۔ذاتی، عائلی اور پارٹی مفادات اور مراعات کی یقین دہانی۔۔۔ اور ۔۔۔۔۔”

 تو پہلے والا منظر نامہ لوٹ آتا ہے اور نئے چہرے پرانے کھیل میں رنگ بھرنے شروع کر دیتے ہیں۔۔۔۔۔

Advertisements
This entry was posted in Life, My World, Pakistan, Politics, Travel, Urdu and tagged , , , , . Bookmark the permalink.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s